ٹانسلز اور دائمی نزلہ(Flu) سے کلی نجات

ٹانسلز بہت دردful مرض ہے اور یہ وبا اسقدر عام ہے کہ ننھے معصوم بچوںکو بے حد تکلیف کا سامنا ہے۔ ٹانسلز کے ساتھ ہی بخار ہوجاتا ہے۔ پس (Pus) گلے کے اندر ہوجاتی ہے جس کی وجہ سے دوائیؤں کے ساتھ انجکشن لگوانے پڑتے ہیں۔ ہر چیز کا پرہیز الگ سے ہوتا ہے حتیٰ کہ گرمیوں میں بھی ٹھنڈا پانی(water) نہیں پی سکتے۔
میری بچی تقریباً چار سال اس مرض کا شکاررہی۔ پیسہ تو مرض پر خرچ ہوتا ہی تھا لیکن اس بیماری میں جس قدر تکلیف اور پرہیز کروانا ہوتا ہے اس اذیت سے ماں اور بچہ دونوں گزرتے ہیں۔
اس خطرناک مرض کی اذیت وہی جانتے ہیں جو اس سے گزرتے ہیں۔میری بچی کو جب doctorز نے کہہ دیا کہ اب تو اس کا مرض صرف گلے کا operation ہی ہے لیکن تاحیات کھٹی ٹھنڈی(cپرانی) چیزوں کا پرہیز کرنا ہے۔
operation کروانے کیلئے میری بچی نے انکار کردیا لیکن میری بچی کو جس قدر تکلیف تھی میں وہ دیکھ نہیں سکتی تھی۔ اللہ کی قدرت کہ راقمہ یہی سوچتی رہی کہ میرے مولا تو نے بیماری دی ہے تو انشاء اللہ اس کا تو نے مرض بھی دیا ہے۔ دو نفل پڑھے خوب اللہ سے دعا مانگی جو نسخہ لکھ رہی ہوں اور میں نے اس کواستعمال کیا ‘بیشمار امراض کیلئے استعمال کرچکی ہوں۔  وہ مکمل نسخہ لیا اپنی بچی کے کانوں کے نیچے یعنی پوری گردن پر اچھی طرح لگایا۔ ماہ جنوری میں یہ مرہم جو کے خود بنایا تھا بہت اطمینان سے بیٹی نے لگوالیا‘ گردن پر سوتی کپڑا لپیٹا اور پھر گرم پٹی جو کہ سٹور سے مل جاتی ہے وہ اوپر سے لپیٹ دی۔ میری بچی نے 72 گھنٹے تک وہ پٹی باندھے رکھی۔ جب وہ دوائی اور پٹی اتاری تو گلے کے اندر کے پس (pus) اوردرد سب ٹھیک ہوچکا تھا اب تین سال ہوچکے ہیں میری بیٹی نے کبھی پرہیز نہیں کیا اور اسے دوبارہ کبھی ٹانسلز کی تکلیف بھی نہیں ہوئی۔ نسخہ لاجواب حاضر ہے:۔
چائے کی خشک(dry) پتی دو چائے کے tea spoon‘ کلونجی چائے کے دو tea spoon‘ برگ مدارکا ایک خشک(dry) پتہ پیس کر پوڈر بنالیں۔ ہلدی چائے کے دو tea spoon‘ پھٹکڑی سفید دوچائے کے tea spoon‘ روغن زیتون مقدار خود متعین کرلیں۔ تمام اشیاء کو خوب باریک پیس لیں۔ پھر روغن زیتون ملالیں اور اس کو tea spoon سے خوب پھینٹ کر وہ مرہم بن جائے طریقہ حسب ضرورت بچے کی گردن پر لگائیں۔ سوتی کپڑا لپیٹ کر اور پھر گرم پٹی باندھ دیں۔ بارہ گھنٹے بعد پٹی اتاریں۔ ایک گھنٹے بعد پھر اس طرح نسخہ استعمال کریں تین دن۔
یہی نسخہ بہت سے بچوں کو استعمال کرایا سب نے شفاء پائی۔ مجرب ہے‘ تیربہدف ہے۔ بچوں کو نمک(salt or white iodine salt) اور پھٹکڑی پانی(water) میں ڈال کر غرارے ضرور کروائیں‘ ورنہ مرض ادھورا ہوگا۔

Leave a Reply

Close Menu
×
×

Cart